موسمِ سرما کا آغاز ہوتے ہی عام طور پر مونگ پھلی اور خشک میوہ جات کی مانگ بڑھ جاتی ہے اور دیکھنے میں مونگ پھلی بازاروں میں کافی وافر مقدار میں دستیاب بھی ہوتی ہے۔ کیونکہ عوام سردی میں اسے بہت شوق سے کھانا پسند کرتی ہے۔

مونگ پھلی اور اس سے حاصل شدہ گری کھانے کے بعد پانی نہ پینے کا تاثر پایا جانا عوام میں ایک عام سی بات ہے۔ مگر کیا واقعی یہ عمل آپ کی صحت کے لیے نقصان دے ثابت ہو سکتا ہے؟ یا پھر یہ تاثر صرف باتوں کی حد تک محدود ہے۔
ایک انکشاف کے مطابق مونگ پھلی کھانے کے بعد پانی پینے سے کھانسی اور گلے میں خراچ جیسی بیماریاں بھی ہوسکتی ہے البتہ یہ بات اب تک سائنسی ماہرین اور ان کے تجربات سے ثابت شدہ نہیں ہے۔
بعض ماہرین کا یہ ماننا ہے کہ مونگ پھلی کی گری بظاہر قدرتی طور پرخشک ہوتی ہے مگر اس میں تیل شامل ہوتا ہے، اسی لیے اس کو کھانے کے بعد پیاس کی شدت بڑھ سکتی ہے اور غذائی نالی میں چربی جمع ہونے کا امکانات بھی ہو سکتے ہیں جس سے گلے میں خراش اور کھانسی ہو سکتی ہے۔
تاحال مونگ پھلی کھانے کے بعد پانی پینے کے نقصانات کسی مکمل سائنسی تحقیق سے واضح نہیں ہیں۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *